بچہ اور ريڈيو_ٹى _وي

بچہ اور ريڈيو_ٹى _وي

ريڈيوي، ٹيلى وين اور سينما بہت ہى سودمند ايجادات ہيں _ ان كے ذريعے سے تعليم و تربيت كى جاسكتى ہے _ لوگوں كے افكار كو جلا بخشى جا سكتى ہے _ دينى و اخلاقى اقدار كو رائج كيا جا سكتا ہے زرعى اور صنعتى شعبوںميں راہنمائي كى جا سكتى ہے _ صحت و صفائي كے امور پر رشد پيدا كيا جا سكتا ہے _ سياسى اور سماجى حوالے سے عوام كى سطح معلومات كو بلند كيا جا سكتا ہے _

انسان عوامى رابطے كے ان وسائل سے سينكڑوں قسم كے فائدے اٹھا سكتا ہے البتہ يہ وسائل جس قدر مفيد ہوسكتے ہيں اسى قدر ان سے سوء استفادہ بھى كيا جا سكتا ہے _ اگر يہ وسائل نا اہل لوگوں كے ہاتھوں ميں آجائيں تو وہ غلط راستے پر ڈال ديں گے اور ان كے ذريعے سے عوام كو صحت ، ثقافت ، دين ، اخلاق ، اقتصاد اور سياست كے حوالے سے سينكڑوں قسم كے نقصانات پہنچائيں گے _ ريڈيو اور ٹى _ وى تقريباً عمومى حيثيت اختيار كر چكا ہے اور اب ہرگھر ميں جا پہنچا ہے _ بيشتر لوگ اسے ايك تفريح اور مشغوليت كا ذريعہ سمجھتے ہيں _ اور انہيں ديكھنا اورسننا پسند كرتے ہيں _ خصوصاً بچے اور نوجواں ان سے بہت دلچسپى كا اظہار كرتے ہيں _

باخبر لوگوں كى رائے كے مطابق ايرانى بچے امريكہ ، فرانس، برطانيہ اور جاپان جيسے ترقى يافتہ ملكوں كے بچوں كى نسبت ٹيلى وين كے پروگراموں سے زيادہ دلچپسى ركھتے ہيں ، ايران ميں 207 كے ناظريں ميں سے چاليس فيصد بچے ہيں ، تيس فيصد نوجوان ہيں جب كہ بچپن اور نوجوانى كى عمر تعليم و تربيت كے اعتبار سے حساس ترين دور ہوتا ہے _ ريڈيوٹيلى وين كے پروگرام اچھے ہوں يا برے بلا شك ان كى حساس روح پر بہت اثر كرتے ہيں _ اور انہيں سطحى اور بے اثر نہيں سمجھنا چاہيے _ بچّے كو آزادى نہيں دى جا سكتى كہ وہ ہر طرح كا پروگرام ديكھے يا سنے كيونكہ بعض پروگرام بچے كے ليے نقصان وہ ہوتے ہيں _ كاش ريڈيواور 207 كے اہل كار يہ جانيں كہ وہ كس حساس منصب پر كام كررہے ہيں اور كتنى عظم ذمہ دارى ان كے دوش پر ہے افراد ملت خصوصاً بچوں اور نوجوانوں كى تعليم و تربيت كا بڑا حصّہ انہيں كے ذمہ ہے _ ماں باپ بھى اس سلسلے ميں لا تعلق نہيں رہ سكتے اور بچوں كو ہر طرح كا پروگرام سننے اور ديكھنے كى اجازت نہيں دے سكتے _

ريڈيو، 207 كے پروگراموں كا ياك حصہ ايسى كہانيوں اور فلموں پر مشتمل ہوتا ہے جس ميں قتل ، ڈاكلہ ، چورى ، جرم ، اغوائ، لڑائي جھگڑا، تشدد، فريب ، دھوكا و غيرہ جيسى چيزيں شامل ہوتى ہيں _ بچے ايسى كہانيوں اور فلموں كے شوقيں ہوتے ہيں اور ان سے بہت لطف اٹھاتے ہيں _ جب كہ ايسى فلميں اور كہانياں بچوں كے ليے كئي جہات سے نقصان وہ ہيں _ مثلاً

1_ بچوں كى حساس اور لطيف روح كو بڑى شدت سے تحريك كرتى ہيں _ ہوسكتا ہے كہ ان كى وجہ سے بچوں كے اندر ايك اضطراب اور خوف ووحشت كى كيفيت پيدا ہوجائے _ہوسكتا ہے وہ رات كو ڈراؤنے خواب ديكھيں اور سوتے ميں چيخ ماريں _ ہوسكتا ہے انيہں سردرد لاحق ہوجائے اور يہاں تك ممكن ہے كہ وہ ايسى فلميں ديكھتے ہوئے بے ہوش ہوجائيں يا ان پر سكتہ طارى ہوجائے _

2_ ايسى فلموں سے ہوسكتا ہے كہ اخلاق كے حوالے سے نقصان وہ اثرات مرتب ہوں _ اور بچوں كى پاك طبيعت كو وہ گناہ اور برائيوں كى طرف كھينچ لائيں _ ہوسكتا ہے كہ بچے ان سے اس قدر متاثر ہوں كہ ان كے ہيرو كى تقليد كريں _ اور جرم ، تقل اور چورى كرنے لگيں _

يونسكو نے اس سلسلے ميں جو تفصيل جارى كى ہے اس كے مطابق اسپين ميں 1944 سے لے كر 1953 ء تك سزا پانے والے بچوں ميں سے 37 فيصد نے جرائم پر مبنى فلموں سے متاثر ہوكر جرم كيا ہے _

امريكہ ميں وسيع پيمانے پر ہونے والى تحقيقات كے مطابق مجرم بچوں ميں سے دس فيصد لڑكے اور پچيس فيصد لڑكياں جرائم سے بھر پور فلمين ديكھ كر مجرم بنتى ہيں _ يہ اعداد شمار واقعاً ہلاكرركھ دينے والے ہيں _ (1)

بلامرد پازركے نظريے كے مطابق 49/ مجرم فلموں سے متاثر ہوكر اپنے ساتھ اسلحہ ركھتے ہيں _ 28/ چورى كرنے اور 21/ فيصد قانون كى گرفت سے بھاگنے اور پوليس كو چكّردينے كے طريقہ انہى فلموں سے سيكھتے ہيں _ تحقيق سے يہ بات ثابت ہوئي ہے كہ 25/ عورتيں برى فلموں كے زيرا اثر برائي اور بدكارى كى راہ پر چل پڑى ہيں نيز 54/ عورتيں پلا پرواہ فلمى ستاروں كى تقليد ميں قحبسہ خانوں اور برائي كى محفلوں كى زينت بنى ہيں _(2)

يونيورسٹى لاس اينجلز كے ايك پروفيسر واكس مين كہتے ہيں:

اس ميں كوئي شك نہيں كہ ٹى وى كى سكرين سے نكلنے والى اليكٹرك مقناطيسى لہريں (WAVES - MAGANATIC) انسانى آرگنزم (MAGNETIC) پر بہت اثر كرتى ہيں _ ٹيلى وين يا رڈاريا گھريلو ضرورت كى بجلى كى چيزوں سے نكلنے والى لہريں شارٹ ويوز كى قسم ميں سے ہيں _ اور اس كا پہلا اثر يہ ہوتا ہے كہ انسان كے سر ميں درد ہوتا ہے اورسر چكرانے لگتا ہے _ اس سے انسان كى فكرى صلاحيت كم ہوجاتى ہے _ خون كا دباؤ تبديل ہوجاتا ہے _ طبيعت ميں ہيجان پيدا ہوتا ہے اور خون كے سفيد خليوں كو نقصان پہنچتا ہے علاوہ ازيں يہ لہريں انسان كے نظام ، اعصاب پر بہت برا اثر ڈالتى ہيں اور مختلف بيماريوں كا سبب بن جاتى ہيں _ (3)

ڈاكٹر الكسنر كارل لكھٹے ہيں:

ريڈيو _ ٹى وى اور نامناسب كھيل ہمارے بچوں كے جذبات كو تباہ كر ديتے ہيں _ (4)

روزنامہ اطلاعات اپنے شمارہ 15743 ميں ايك يورپى طالب علم كے بارے ميں لكھتا ہے:

كالج كے ايك اٹھارہ سالہ طالب علم كو گرفتار كركے عدالت ميں پيش كيا گيا _ اس پر الزام ہے كہ اس نے ايك فلمى اداكار والٹر كا تائر كے بيٹے اغوا كيا اور پھر دھمكى دى كہ اسے ايك لاكھ پچاس ہزار ڈالر پہنچاديے جائيں ورنہ وہ اسے قتل كردے گا _ ملزم نے عدالت كے سامنے بيان ديتے ہوئے كہا كہ قتل كى دھمكى دے كر غنڈہ ٹيكس وصول كرنے كا خيل اس كے ذہن ميں ٹيلى وين كى ايك فلم ديكھتے ہوئے پيدا ہوا _

اس سلسلے ميں پولى كا كہنا يہ ہے كہ ايسے بہت سے كيس ہمارے پاس پہنچے ہيں كہ نوجوانوں نے ٹيلى وين سے جرم كا ارتكاب كرنا سيكھا ہے _ مشہد ميں ايك دس سالہ بچے نے كراٹے كى ايك فلم ديكھنے كے بعد اپنے آٹھ سالہ دوست كو كك ماركر مارڈالا _ (5)

تعليم و تربيت كے نائب وزير جناب صفى نيا كہتے ہيں:

جب ٹى وى برائي كا درس دے رہا ہو تو بہترين استاد بھى كچھ نہيں كرسكتا _ (6)

كيوبا كے ايك پندرہ سالہ لڑكے رونے زامورانے ايك 83 سالہ بوڑھى عورت كو قتل كرديا اس نے يہ جرم فلوريڈ ميں انجام ديا _ اور اب وہ اس شہر كى ايك جيل ميں اس جرم كى سزا كے طور پر عمر قيد كاٹ رہا ہے _ اس كے والدين نے امريكى ٹيلى وين كے تين چينلوں كے خلاف دوكروڑ پچاس لاكھ ڈالر ہر جانے كا دعوى دائر كيا ہے _ انہوں نے عدالت ميں اپنے دعوى كے ثبوت ميں جو شواہد پيش كيے ہيں ان كے مطابق بچے نے آدم كشى كا سبق اسى ٹيلى وين كے پروگراموں سے سيكھا ہے _ گذشتہ ستمبر عدالت ميں اس كيس كى سماعت ہوئي اس موقع پر يہ بات سامنے آئي كہ ملزم جب بچہ تھا تو آيا اسے چپ كرانے كے ليے ٹى _ وى كے سامنے بٹھاديتى _ اس سے اس ميں ٹيلى وين ديكھنے كا بہت شوق پيدا ہوگيا وہ روزانہ آٹھ اٹھ گھنٹے تيلى وين پروگرامم ديكھتا رہتا _ اسے ٹى _ وى كے پروگراموں سے بہت دلچسپى پيدا ہوگئي خاص طور پر '' پليس كو جاك'' نامى سيريز سے وہ بہت متاثر تھا ارتكاب جرم سے ايك رات پہلے اس فلم ميں دكھايا گيا كہ كس طرح سے ايك امير عورت كو لوٹا گيا _

ايك لڑكى جس كا نام رضائيہ تھا _ پندرہ سال اس كى عمر تھى بہت خوبصورت لڑكى تھى ٹيلى وين پر ايك پر ہيجان فلم ديكھتے ہوئے اس پر اس قدر اثر ہو اكہ وہ زمين پرى گرى اور مرگئي _ جب اس نے فلم ميں ديكھا كہ ايك سفيد فام شخص ايك سياہ فام كے سر كى چمڑى ادھيڑنے لگا ہے تو اس نے ايك چيخ مارى _ پھر اس كے دل كى دھڑكن بند ہوگئي _ ڈاكٹروں نے بتايا كہ اس كے دماغ كى رگ پھٹ گئي _

اعصاب اور نفسيات كے ماہر ڈاكٹر جلال بريمانى كہتے ہيں:

خوف ناك، ڈراؤنى اور ہيجان انگيز فلميں بچوں كى نفسيات پر نامطلوب اثر ڈالتى ہيں _ ہم نے ديكھا ہے كہ ايك بچہ ماردھاڑسے بھر پور فلم ديكھنے كے بعد فلم كے ہير و كى تقليد ميں اپنے چھوٹے بھائي يا بہن كو قتل كرديتا ہے _ ايسى فلميں بچے كى آئندہ شخصيت پر برے اثرات مرتب كرتى ہيں خوفناك فلموں كا نتيجہ يہ ہوتا ہے كہ برے ہوكر ان كے اندر بزدلى پيدا ہوجاتى ہے ، مارڈھاڑ كى فلميں آئندہ كى زندگى ميں انہيں بھى ايسا ہى بناديتى ہيں _ ان كے اثرات انسان كى روح پر رہتے ہيں اور پھر جہاں موقع ملتا ہے كسى غلط واقع كى صورت ميں نمودار ہوتے ہيں اور انسان كو برائي كى طرف كھينتے ہيں _

نفسيات كے ڈاكٹر شكر اللہ طريقتى كہتے ہيں:

برى فلموں كا اثر بچے كے مستقبل پر ناقابل انكار ہے _ يہ فلميں بچوں كى نفسيات پر ايسا نامطلوب اثر ڈالتى ہيں كا بالغ ہوكر جب مناسب موقع ملتا ہے اور دوسرے اسباب بھى فراہم ہوجاتے ہيں تو وہ خطرناك كاموں كى انجام دہى كى صورت ميں اس كى مدد كرتا ہے _ لہذا ميں ماں باپ و نصيحت كرتا ہوں كہ وہ اپنے بچوں كو ہرگز اجازت نہ ديں كہ وہ غلط فلميں ديكھيں _ خاص طور پر وہ فلميں جو بڑوں كے ليے مخصوص ہيں خصوصاً رات كے دس بجے كے بعد آنے والى فلموں كى اجازت نہ ديں _ اگر بچے ايسى فلميں ديكھنے كے ليے ضد كريں اور والدين انہيں اس كى اجازت نہ ديں تو اولاد كے حق ميں يہى ان كى محبت ہے _

تہران يونيورسٹى كے ايك استاد اور جرم شناسى ڈاكٹر رضا مظلومى كہتے ہيں:

ٹيلى وين اور سينما گھروں ميں دكھائي جانے والى بہت سى فلميں ہمارے معاشرے كے ليے خطرناك ہيں _ ان كے خطرات اس حد تك بڑھ چكے ہيں كہ گيارہ سالہ بچى كو انہوں نے زندگى سے محروم كرديا اور اس كے دل كى دھڑكن كو بند ميں جرات مندى كے ساتھ يہ كہتا ہوں كہ عصر حاضر ميں ہونے والے بہت سے جرائم اور مظالم انہيں فلموں كے برے اثرات كى وجہ ہيں _ (7)

نيويارك كے ايك ہسپتال ميں كام كرنے والے ڈاكٹر آرنالڈ فريمانى نے جديدترين اليكٹرانك آلات اور تجربات سے يہ ثابت كيا ہے روحانى اور فكرى كمزورى اور شديد سردرد ريڈيوپر نشر ہونے والى موسيقى كے سننے سے پيدا ہوتے ہيں _ (8)

اخبار ٹائمز اپنے 1964 كے شمارہ ميں لكھتا ہے:


بچوں كى بيماريوں كے ماہر ڈاكٹر نے فضائيہ كى دو چھاؤنيوں ميں اس بات كو محسوس كيا كہ اس علاقے ميں كام كرنے والے افسران كے بچے كہ جن كى عمر 3 سال سے بارہ سال كے درميان ہے ہميشہ دردسر، بے خوابى ، معدہ كى گڑبڑ، قے پيچش اور ديگر بيماريوں ميں گھرے رہتے ہيں _ طبى نقطہ نظر سے اس بيمارى كى كوئي وجہ معلوم نہ ہوئي _ ليكن مكمل طور پر تحقيق كرنے كے بعد وہ اس نتيجہ پر پہنچے كہ يہ تمام بچے ٹيلى وين كے طويل پروگرام ديكھنے كے عادى ہيں اور ہر روز 3 گھنٹے سے 4 گھنٹے تك ٹى _ وى پروگرام ديكھتے ہيں _ ڈاكٹروں نے ان كے ليے صرف يہى علاح متعين كيا كہ ان كوئي _ وى پروگرام ديكھنے كى اجازت نہ دى جائے _ يہ علاج كيا اور مؤثر بھى رہا _ سردرد ، قے ، پيچش اور باقى تمام بيمارياں ختم ہوگئيں _ (9)

لہذا جن والدين كو اپنے بچوں سے محبت ہے وہ انہيں دن رات ريڈيو اور ٹيلى وين سننے اور ديكھنے كى اجازت نہ ديں _ صرف ان پروگراموں كو ديكھنے كى اجازت ديں جن سے بچوں كو كوئي نفسياتى ، روحانى اور اخلاقى نقصان نہ پہنچے _

 


1_ مجلہ : مكتب اسلام جلد 15 شمارہ 11
2_ مجلہ: مكتب اسلام ، جلد 15 شمارہ 11
3_ مجلہ ; مكتب اسلام ، جلد 18 ، شمارہ 1
4_ مكتب اسلام ،جلد 15 ، شمارہ 3
5_ مكتب اسلام ، جلد 15 ، شمارہ 11
6_ مكتب اسلام ، جلد 18 ، شمارہ 1
7_ روزنامہ اطلاعات _ 10 آبان ماہ 1352
8_ مكتب اسلام : جلد 15 شمارہ 3
9_ پيوند ہاى كودك و خانوادہ ص 131