تمباكو نوشي

تمباكو نوشي

حاملہ عورتوں كو نصيحت كى جاتى ہے كہ وہ سگريٹ اور ہر طرح كى تمباكو نوشى سے بچيں _ كيونكہ تمباكو نوشى نہ صرف مال كى صحت كے لئے خطرناك ہے بلكہ اس كے برے اثرات رحم ميں موجود بچے كے جسم اور اعصاب پر بھى پڑتے ہيں _ اس ضمن ميں ہم ايك غير ملكى مجلے كے ايك مقالے كا خلاصہ نقل كرتے ہيں _ اس كى طرف توجہ فرايئےا _

ايك تحقيق جو سكنڈانيوين ممالك ميں 6363 حاملہ عوتروں پركى گئي ہے اس سے ظاہر ہوتا ہے كہ جو عورتيں سگريٹ كى عادى ہيں ان كے بچوں كا اوسط وزن دوسرے بچوں كے اوسط وزن سے 170 گرام كم ہوتا ہے _ وزن كى يہ كمى ان ماؤں كے 50 بچوں ميں پائي گئي ہے _ جب كہ دوسرى طرف ان بچوں كا قد بھى دوسروں سے كم تر پايا گيا ہے _ اسى طرح سے ان كے سر اور شانے بھى دوسرے بچوں سے چھوٹے ہوتے ہيں _ ان بچوں كى موت بھى دوسرے بچوں كى نسبت چھ گنا زيادہ ہوتى ہے _ ان بچوں كے اعضا ميں نقص بھى دوسرے بچوں كى نسبت كہ جن كى مائيں سگريٹ كى عادى نہيں ہيں زيادہ ہوتا ہے _ سگريٹ كا استعمال ماں اور رحم ميں بچے كے خون ميں آكسيجن كى كمى اور كاربوكسى ہموگلوبين (1) كى زيادتى كا باعث بنتا ہے _ سگريٹ پينے والى ماں كے بچوں ميں دل كى پيدائشےى بيمارى دوسرى ماؤں كے
 

بچوں كى نسبت 50 0/0 زيادہ ہوتى ہے اعداد و شمار اس امر كا پتہ ديتے ہيں كہ تمبا كو نو شى كرنے والى ماوں كے بچے تعليم ميں اپنے ہم سن بچوں سے پيچھے ہو تے ہيں اور يہ عقب ماندگى دوران حمل سگريٹ نوشى كى مقدار كے مطابق ہوتى ہے كيونكہ سگريٹ بچے كے مغز كے خليوں كى كمى كا باعث بنتى ہے _ يہ تو ان نقصانات كا ايك چھو ٹا ساحصہ ہے كہ جو سگريٹ نوشى سے ماوں اور نوزاد بچوں كو پہنچتا ہے _ شايد اس كے اور بھى بہت سے عوارض اور پہلو ہيں كہ جوا بھى نا شناختہ ہوں _ لہذا وہ سب مائيں جو اپنى اور اپنے بچوں كى صحيح و سالم زندذگى كى خواہش ركھتى ہيں انہيں نصيحت كى جاتى ہے كہ وہ تمبا كو نوشى سے اجتناب كريں ( 2)

ڈاكٹر جزائرى لكھتے ہيں :

تمبا كو نوشى ماں كے ليے نقصان وہ ہے اور رحم مادر ميں موجود بچے كے لئے الكحلى مشروبات بھى حاملہ عورتوں كے ليے غير معمولى طور پر خطر ناك ہيں _ اس بات سے صرف نظر كہ الكحل جو زہر پيدا كرتى ہے ان و ٹا منز كو بھى تباہ كرديتى ہے كہ جو ماں اور اس كے پيٹ مين بچے كى ضرورت ہوتے ہيں اور اولاد ناقص الخلقہ اور عيب دار ہو جاتى ہے تمبا كو نو شى اور تيز چائے بھى حاملہ عورتوں كے ليے غير معمولى طور پر ضرر رساں ہيں ( 3)

ڈاكٹر جلالى لكھتے ہيں :

الكحل ، چرس اور ديگر تمام منشيات انسان كے خوں ميں شامل ہو جاتى ہين اور يہى خون جنين كے گرو ہو تا ہے اور نتيجتا اس كے رشد و نمو پر اثر كرتا ہے يہاں تك كہ بعض ماہرين كا نظر يہ ہے كہ عورتوں كى تمبا كو نوشى سے جنين كا دل متاثر ہو تا ہے اور دل كى دھڑ كن كو تيز كرتا ہے(4)

 

1_ ہے
2_ مكتب اسلام _ سال 15 _ شمار ہ 6
3_ اعجاز خورا كيہا ص 215
4_ روانشناسى كودك ص 222