سياسى اور سماجى تربييت

سياسى اور سماجى تربييت

آج كے بچے كل كے جوان ہيں _ ملك انہيں كاماں ہے _ اور انہيں كو كل ملك كا نظام چلاناہ ے _ ان كى سياسى آگاہى اور شعور ملك كے مستقبل پر اثر انداز ہوگا ي_ يہى ہيں كہ جنہيں ملك كى ثقافتى اور اسلامى دولت كى پاسدارى كرنا ہے _ اور ملك كى عظمت و سربلندى كے ليے انہيں كو كوشش كرنا ہے _ انہيں كو سامرا جى اور استعمارى قوتوں كے، ظلم و ستم كا مقابلہ كرنا ہے _ بچوں كو آج ہى اس مقصدتكے ليے تياركرنا چاہيے _ ان كى تربيت كرنا چاہيے اور يہ بھارى ذمہ دارى بھى ماں باپ كے كندھوں پر عائد ہوتى ہے _

سياسى و سماجى تربيت كى بنياد بھى بچپن ہى ميں ركھى جانا چاہيے تا كہ وہ زيادہ ثمر بخش ہو _ جب بچہ سن تميز كو پہنچے تو اسے اس كے فہم و شعور كى حد تك سياسى و سماجى مسائل كو سمجھنا چاہيے _ اسے اقتصادى اور سياسى حالات كو آہستہ آہستہ جاننا چاہيے _ ملك كے فقر محروميت اور پسماندگى كى وجوہات تدريجاً اسے سمجھائي جانا چاہيئں _ حكمرانوں كى اچھائياں اور برائياں بچوں سے بيان كى جا سكتى ہيں _ اور نظام كس طرح سے چلتا ہے انہيں سمجھايا جا سكتا ہے گاؤں، شہر اور ملك كمى عمومى حالت اس سے بيان كى جا سكتى ہے _بچہ انتخابات ميں شركت نہيں كرسكتا ، ليكن ماں باپ انتخابات ميں شركت كى خصوصيات اور شرائط كى اس كے سامنے وضاحت كرسكتے ہيں _ اور اسے سمجھا سكتے ہيں كہ كس طرح كے لوگوں كو منتخب كرنا چاہيے _ مثلاً اس سے كہہ سكتے ہيں ہم نے فلاں شخص كو دوٹ ديا ہے كيونكہ اس ميں فلان خوبى ہے بچہ بھى جلسے جاسوس ميں شركت كرسكتا ہے _ وہ بھى نعرہ لگا سكتا ہے _ تقريريں سكتا ہے _ اشتہارات تقسم كرسكتا ہے _ اور ديوار نويسى (وال چاكنگ) كرسكتا ہے _ اور يہ كام اس كے ليے مؤثر بھى ہوں گے _ ايران كے اسلامى انقلاب نے بخوبى ثابت كرديا ہے كہ بچے اور نوجواں بھى سياسى امور ميں مؤثر كردار ادا كرسكتے ہيں _ يہى تو تھے كہ جنہوں نے اپنے نعروں ، جلسے جلوسوں اور ہڑتالوں سے طاغوت كى آلہ كار خود غرض حكومت كو گھٹنے ٹيكنے پر مجبور كرديا _ انہيں نے انقلابيوں كو تقويت بخشى اور ايران كى مسلمان ملت كى مظلوميت اور شاہى حكومت كے ايجنٹوں كے ظلم و خيانت كو دنيا والوں كے كانوں تك پہنچايا _ سب جانتے ہيں كہ ايران كے عظيم انقلاب كى كاميابى كا ہم حصّہ نوجوانوں ہى كى فعّال اور متحرك قوّت اور انہيں كى جانثاريوں كامرہون منت ہے _

چاہيے كہ بچے سياسى واقعات كا مطالعہ كركے ، اخبارات وجرائد كو پڑھ كر ، ريڈيو اور ٹيلى وين كے سياسى اور سماجى پروگرام سن اور ديكھ كر ماں باپ اور دوسرے بچوں سے بات چيت كر كے تدريجاً سياسى رشد پيدا كريں _ اور اپنے اور اپنے ہموطنوں كے مستقبل كے بارے ميں دلچسپى پيدا كريں _ انہيں جاننا چاہيے كہ مستقل ميں ان كے وطن كى تقدير ان كے اور ان كے ہم سن بچوں اور نوجوانوں كے ہاتھ ميں ہوگى _ بچے كو سمجھنا چاہيے كہ دنيا آخرت سے اور دين سياست سے جدا نہيں ہے _ اور لوگوں كو چاہيے كہ وہ اپنے سماجى اور دنياوى امور ميں دخيل رہيں تا كہ ملك آباد اور ملت با شعور بنے _

نوجوانى اور جوانى ميں اولاد كو نسبتاً زيادہ آزايد ملنى چاہيے تا كہ وہ خود با قاعدہ سياسى امور سماجى امور ميں شركت كريں _