چوتھا سبق: لوگوں كا رہبر اور استاد

چوتھا سبق
لوگوں كا رہبر اور استاد


پيغمبر لوگوں كا رہبر اور استاد ہوتا ہے _ رہبرى كے لئے جس چيز كى ضرورت ہوتى ہے _ اسے جانتا ہے _ دين كے تمام احكام جانتا ہے _ اچھے اور برے سب كاموں سے واقف ہوتا ہے _ وہ جانتا ہے كہ كون سے احكام آخرت كى سعادت كا موجب ہوتے ہيں اور كون سے كام آخرت كى بدبختى كا سبب بنتے ہيں _ پيغمبر خدا كو بہتر جانتا ہے _ آخرت اور بہشت اور جہنم سے آگاہ ہوتا ہے _ اچھے اور برے اخلاق سے پورى طرح با خبر ہوتا ہے _ علم اور دانش ميں تمام لوگوں كا سردار ہوتا ہے اس كے اس مرتبہ كو كوئي نہيں پہنچانتا _ خداوند عالم تمام علوم پيغمبر كو عنايت فرما ديتا ہے تا كہ وہ لوگو1ں كى اچھے طريقے سے رہبرى كر سكے _چونكہ پيغمبررہبر كامل اور لوگوں كا معلم اور استاد ہوتا ہے _ اسلئے اسے دنيا اور آخرت كى سعادت كا علم ہونا چاہيے تا كہ سعادت كى طرف لوگوں كى رہبرى كر سكے _

سوچ كر جواب ديجئے
1_ لوگوں كا رہبر اور استاد كون ہے اور ان كو كون سى چيزيں بتلاتا ہے ؟
2_ پيغمبر كا علم كيسا ہوتا ہے كيا كوئي علم ميں اس كا ہم مرتبہ ہوسكتا ہے؟
3_ پيغمبر كا علوم سے كون نواز تا ہے ؟
4_ رہبر كامل كون ہوتا ہے؟