پانچواں سبق: آخرت كى زندگى

پانچواں سبق
آخرت كى زندگي


آخرت ميں ہم زندہ ہوجائيں گے


سعيدہ كى عمر نوسال كى تھى تيسرى كلاس ميں پڑھتى تھى بہت ہوشيار لڑكى تھى وہ ہميشہ سوال كرتى اور جواب چاہتى تھى _ ايك دن ماں سے پوچھنے لگى _ اماں جان يہ كيا ہوا صبح ہوتى ہے ناشتہ كرتے ہيں _ باپ كام پر چلے جاتے ہيں _ ميں مدرسہ چلى جاتى ہوں _ آپ رات تك كام كرنے ميں مشغول ہوجاتى ہيں _ باپ گھر واپس آجاتے ہيں _ رات كا كھانا كھاتے ہيں _ اور دستر خوان لپيٹ كر اس كے بعدسوجاتے ہيں _ كل پھر اسى طرح _ اور پر سوں بھى اسى طرح_ بلكہ پورى عمر اسى طرح : يہ كس لئے اور اس كا فائدہ كيا ہے؟ امان جان؟ ہم كس لئے بڑے ہوتے ہيں _ لڑكياں عورت بن جاتى ہيں _ لڑكے مرد ہوجاتے ہيں ؟ اور بعد ميں بوڑھے ہوجاتے ہيں اور ہمارى زندگى ختم ہوجاتى ہے _ يہ تمام كام اس لئے كرتے ہيں تا كہ ہم مرجائيں _ جيسے ہمارى دادى مرگئي ہيں _
يہ بے فائدہ اور بے نتيجہ زندگي
ماں نے كہا بيٹى سعيدہ ہمارى زندگى اور ہمارے كام بغير نتيجہ كے نہيں ہيں _ ہم مرجانے سے بالكل فنا نہيں ہوجاتے اور ہمارى زندگى ختم نہيں ہوتى بلكہ اس دنيا سے دوسرى دنيا كى طرف جاتے ہيں اور وہاں اپنے كاموں كا نتيجہ پاتے ہيں _ سعيدہ بيٹى ہم آخرت ميں ہميشہ ہميشہ زندہ رہيں گے اچھے كام كرنے والے لوگ بہشت ميں جائيں گے اور بہت راحت و آرام كى زندگى بسركريں گے _ اور گنہكار جہنم ميں جائيں گے _ اور عذاب اور سختى ميں رہيں گے _
آخرت كى نعمتيں اور لذتيں دنيا كى لذتوں اور نعمتوں سے بہتر اور برتر ہيں ان ميں كوئي عيب اور نقص نہيں ہوگا _ اہل بہشت ہميشہ اللہ تعالى كى خاص توجہ اور محبت كا مركز رہتے ہيں _ خدا انہيںہميشہ تازہ نعمتوں سے نوازتا ہے اہل بہشت اللہ تعالى كى تازہ نعمتوں اور اس كى پاك محبت سے مستفيد ہوتے ہيں اور ان نعمتوں اور محبت سے خوش و خرم رہتے ہيں _

سوچ كر جواب ديجئے


1_ سعيدہ كس چيز كو بے فائدہ اور بے نتيجہ سمجھتى تھى او ركيوں؟
2_ اس كى ماں نے اسے كيا جواب ديا؟
3_ كيا ہم مرجانے سے فنا ہوجاتے ہيں اگر مرنے سے ہم فنا ہوجاتے ہوں تو پھر ہمارے كاموں اور كوششوں كا كيا نتيجہ ہوگا؟
4_ اپنے كاموں كا پورا نتيجہ كس دنيا ميں ديكھيں گے ؟
5_ نيك لوگ آخرت ميں كيسے رہيں گے اور گناہ كار كيسے رہيں گے ؟
6_ '' دنيا آخرت كى كھيتى ہے '' سے كيا مراد ہے ؟